ھفتہ 24 اکتوبر 2020

"ابھی تو پارٹی شروع ہوئی ہے" پیپلز پارٹی کے رہنماؤں نے کریز سے باہر نکل کر چوکے چھکے لگانا شروع کردیئے

صوبائی وزیر برائے انفارمیشن ٹیکنالوجی سندھ نوابزادہ  تیمور تالپور نے کہا ہے کہ ہم نے پہلے ہی کہا تھا کہ ابھی توپارٹی شروع ہوئی ہے،وزیر اعظم اپنی اوربہن کی بیرون ملک جائیدادوں کی منی ٹریل تیار کریں،جلد عوام عمران خان کی سلائی مشین کا بھی تیاپانچہ  کریں گے،اپوزیشن کو ماسک دینے والے پہلے عوام کو روٹی تو دیں۔

حکومتی ترجمانوں کے بیانات پر رد عمل دیتے ہوئے صوبائی وزیر نے کہا کہ لوگ بھوک سے مر رہے ہیں وزیر اعظم فلم لنگر خانہ کے سیٹ پر عکس بندی میں مصروف ہیں،عمران نیازی کی لنگر خانوں پر اداکاری کا وقت ختم اور پیزے کھا کر ڈکار مارنے والوں کا احتساب لازم ہوچکا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پی ڈی ایم کے گوجرانوالہ میں کامیاب جلسے نے چینی و آٹا مافیا کے تابوت میں پہلی کیل ٹھونک دی ہے، جلسے سے پہلے وفاقی حکومت کی چیخیں بتا رہی ہیں وزیر اعظم پریشان ہیں،اپوزیشن کو ماسک دینے والے پہلے عوام کو روٹی تو دیں۔

انہوں نےکہا کہ عمران خان کے آگے کنواں پیچھے کھائی ہے، گرنا مقدر بن چکا، شتر بے مہار اور ہر وقت  ٹائیں ٹائیں کرنے والے حکومتی ترجمان نئی کشتی ڈھونڈ لیں،آصف زرداری کے وارنٹ گرفتاری جاری ہونے سے ہم گھبرانے والے نہیں ہیں، ہم نے پہلے ہی کہا تھا کہ ابھی توپارٹی شروع ہوئی ہے،سابق ایم این اےاورایم پی اے اب پیپلز پارٹی میں شامل ہونا شروع ہوگئے ہیں اورجلدہی دیگر سیاسی جماعتوں کی بڑی وکٹیں بھی گرنے والی ہیں، ہم سیاسی جدوجہد میں ہیں کیونکہ اس وقت جمہوریت سوالیہ نشان بن گئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ موجودہ وفاقی حکومت کواپنی ساکھ گرتی دکھائی دے رہی ہے،اب کہہ رہے ہیں کورونا پھیل جائیگا،پہلے کہتے تھے سندھ جلد بازہے،کاروبارکھولو،ہم نے کاروبارکے ساتھ ساتھ زبانیں بھی کھولی ہیں ۔