اتوار 29 نومبر 2020

ایشیائی ترقیاتی بینک نے پاکستان کیلئے 1.83ارب روپے کے بونڈ اکٹھے کر لیے

ایشیائی ترقیاتی بینک نے پاکستان کیلئے 1.83ارب روپے کے بونڈ اکٹھے کر لیے

اسلام آباد(دھرتی نیوز) ایشیائی ترقیاتی بینک نے 1.83 ارب روپے (11.4 ملین ڈالر) کے مقامی کرنسی میں ‘قراقرم بانڈز’ اکٹھا کیے ہیں اور پاکستان کی ترقیاتی کوششوں اور کووڈ-19 کے خلاف ردعمل کے لیے مسلسل حمایت کا وعدہ کیا ہے۔

دھرتی نیوز کی رپورٹ کے مطابق ایشیائی ترقیاتی بینک نے ایک بیان میں کہا کہ یہ کثیرالجہتی ترقیاتی بینک کی مقامی کرنسی ‘قراقرم بانڈز’ کا پہلا مسئلہ ہے جہاں پاکستان اس بینک کا رکن ہے۔

قراقرم ایک آف شور بانڈ ہے جو پاکستان روپے میں مشہور ہے اور اسے امریکی ڈالر میں بتایا جاتا ہے، یہ تمام بڑے اسٹاک ایکسچینج میں درج ہے اور بین الاقوامی سینٹرل سیکیورٹیز ڈپازٹری کے ذریعے طے ہے۔

بیان میں کہا گیا کہ بین الاقوامی بانڈ کے معاملے میں 7.5فیصد سیمی سالانہ کوپن کی ادائیگی ہوتی ہے اور اگست 2023 میں یہ میچور ہو گا، بانڈز کا انتظام سٹی گروپ گلوبل مارکیٹس کے ذریعے کیا گیا تھا اور اسے یورپی اثاثوں کے منیجروں کو فروخت کیا گیا تھا، جاری کردہ بانڈز کی فروخت حاصل ہونے والی رقم کو ایشیائی ترقیاتی بینک کے عام سرمائے کے وسائل میں شامل کیا جائے۔

اس سے قبل پاکستان میں ایشیائی ترقیاتی بینک کے پاس مقامی کرنسی میں قرض نہیں تھا لیکن یہ اختیار مستقبل میں ہونے والے منصوبوں میں ڈالر کے قرض کے متبادل کے طور پر پیش کیا جائے گا، یہ توقع کی جا رہی ہے کہ ایشیائی ترقیاتی بینک کے مقامی کرنسی میں قرضے پاکستان میں نجی شعبے کی ترقی کے لیے فروغ پائیں گے۔

ایشیائی ترقیاتی بینک کے خزانچی پیئری وین پیٹغم نے کہا کہ مقامی کرنسی میں انجینئرنگ کرنا ایک فن اور سائنس دونوں ہے، ہمیں زیادہ سے زیادہ کرنسی اور سود کی شرح کو حاصل کرنے کے لیے نہ صرف مارکیٹ کی شرائط کے ساتھ سرمایہ کاروں کی مانگ کو پورا کرنا ہوگا بلکہ ہمیں بہترین ممکنہ نتائج کے حصول کے سلسلے میں حکومت سے قریبی مذاکرات کے لیے وقت اور وسائل بھی خرچ کرنا ہوں گے۔

وزیر اعظم کے مشیر برائے خزانہ اور محصول برائے عبدالحفیظ شیخ نے کہا کہ ایشیائی ترقیاتی بینک کے ذریعہ پاکستانی روپیہ سے منسلک قراقرم بانڈ ایک بہترین اقدام ہے، انہوں نے مزید کہا کہ اس سے پاکستان اور ایشئیا ترقیاتی بینک کو اہم باہمی فائدہ مند نتائج برآمد ہوں گے۔

اسٹیٹ بینک آف پاکستان کے گورنر رضا باقر نے بھی پاکستان کی مالی اور معاشی ترقی کے لیے ایشیائی ترقیاتی بینک کی طرف سے بانڈ کے لیے تعاون کرنے پر اے ڈی بی کی ٹیم کو سراہا، انہوں نے کہا کہ ایشیائی ترقیاتی بینک کے پاکستان روپے سے منسلک قراقرم بانڈز کا ابتدائی اجرا پاکستان کے دارالحکومت کی منڈیوں کو مزید گہرا کرنے میں مدد فراہم کرے گا جبکہ اہم معاشی شعبوں کو مالی اعانت فراہم کرے گا۔

ایشیائی ترقیاتی بینک نے اس پروگرام کو کامیابی کے ساتھ شروع کرنے کے لیے حکومت سے تعاون کے سلسلے میں درکار معاونت فراہم کرنے پر اسٹیٹ بینک کی تعریف کی، ایشیائی ترقیاتی بینک مرکزی دھارے میں شامل بین الاقوامی بانڈ مارکیٹوں میں باقاعدہ قرض لینے والا ادارہ ہے اور اس نے بینک قرضے کے متبادل کے طور پر مقامی کرنسی بانڈ مارکیٹوں کو فروغ دینے کے لیے ترقی پذیر ایشیائی ممالک میں بھی بانڈز جاری کیے ہیں، ایشیائی ترقیاتی بینک پہلے ہی 2020 میں ہندوستانی روپے، قازقستانی عہد اور منگولین ٹوگرو میں مقامی کرنسی بانڈ جاری کرچکا ہے۔

دریں اثنا ایشیائی ترقیاتی بینک کی نائب صدر شکسین چن نے پاکستان کے اعلیٰ سرکاری عہدیداروں کے ساتھ ورچوئل ملاقاتوں کے سلسلے میں پاکستان کی ترقیاتی کوششوں اور کورونا وائرس کے وبائی مرض کے خلاف ردعمل سلسلے میں مکمل حمایت کی یقین دہانی کرائی۔