ھفتہ 17 اپریل 2021

وہ عام غذا جو دل کے لیے بہت زیادہ نقصان دہ

ایک زمانہ تھا جب ہارٹ اٹیک اور دل کے دیگر امراض درمیانی عمر یا بڑھاپے میں سامنے آتے تھے مگر اب یہ نوجوانوں میں بھی عام ہوتے جارہے ہیں۔

دل انسانی جسم کے اہم ترین اعضا میں سے ایک ہے مگر حیران کن طور پر ہم اس کی زیادہ پروا نہیں کرتے۔

اگر آپ کی غذا میں گھی، چربی یا چکنائی بہت زیادہ ہوتی ہے تو یہ عادت دل کے لیے تباہ کن ثابت ہوسکتی ہے

یہ بات برطانیہ میں ہونے والی ایک طبی تحقیق میں سامنے آئی۔

ریڈنگ یونیورسٹی کی اس تحقیق میں بتایا گیا کہ زیادہ چکنائی یا چربی والی غذا کا استعمال دل میں ایسے ردعمل کو متحرک کرتا ہے جو ہارٹ اٹیک کا خطرہ بڑھاتا ہے۔

تحقیق کے دوران زیادہ چربی والی غذا کا اثرات کا تجزیہ چوہوں پر کرتے ہوئے دیکھا گیا کہ اس سے دل کے خؒیات پر تکسیدی تناؤ کی سطح کیا ہوتی ہے۔

محققین نے بتایا کہ زیادہ چربی یا چکنائی والی غذا کے نتیجے یں دل کے پٹھوں کے خلیات کو نقصان پہنچتا ہے، چوہوں میں اس غذا کے استعمال سے خلیاتی سطح پر عام حالات میں بے ضرر پروٹین نوکس ٹو بہت زیادہ متحرک ہوگیا۔

انہوں نے کہا کہ اس پروٹین سے تکسیدی نقصان ہوتا ہے اور تباہ کن میکنزم حرکت میں آجاتا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ غذا سے نوکس 2 پروٹین کے ردعمل کے بارے میں اب جاکر ہم نے سمجھنا شروع کیا ہے مگر ہماری تحقیق سے ثابت ہوتا ہے کہ زیادہ چربی والی غذائیں دل کو بہت زیادہ نصان پہنچا سکتی ہیں۔

یہ بھی پڑھیں  جاتی امراءکا اصل نام موضع مانک ، سرکاری زمین کسی کو ٹرانسفر نہیں کی جا سکتی ، شہزاد اکبر

تحقیق میں دریافت کیا گیا کہ زیادہ چربی یا چکنائی والی غذا کے استعمال سے چوہوں میں نوکس 2 کی سرگرمیاں دوگنا بڑھ گئی، جس سے ایسا میکنزم متحرک ہوا جو جسم کو نصان پہنچاتا ہے۔

محققین نے 3 تجرباتی طریقہ علاج کو بھی استعمال کیا جن کو نوکس سے متعلق آر او ایس پروڈکشن کی سطح میں کمی کے لیے جانا جاتا ہے۔

انہوں نے دریافت کیا کہ تینوں سے چوہوں کے دلوں کو نقصان پہنچانے والے میکنزم میں کی لانے میں کسی حد تک کمی ملی۔

ان چوہوں کو دن بھر کی 45 فیصد کیلوریز چربی یا چکنائی، 20 فیصد پروٹین اور 35 فیصد کاربوہائیڈریٹ کی شکل میں فراہم کی گئی تھیں۔

تحقیق کے نتائج طبی جریدے بائیو کیمیکل اینڈ بائی فزیکل ریسرچ کمیونیکیشن میں شائع ہوئے۔

Facebook Comments


Dharti News Headlines 6 PM The list of the most powerful countries in the world has been released | Dharti News Twenty percent of Pakistanis own 50 percent of the country’s wealth | Dharti News Dharti News Bulletin 04:30 PM Local and international News – Dharti News Local and International News Bulletin 12 PM Dharti News Headlines 9:00 AM