جمعرات 02 جولائی 2020

نواز شریف کی تازہ ترین میڈیکل رپورٹ سامنے آ گئی

لاہور: سابق وزیر اعظم میاں نواز شریف کی تازہ ترین میڈیکل رپورٹ سامنے آ گئی، رپورٹ میں نواز شریف کی انجیو گرافی جلد از جلد کرانے کی سفارش کی گئی ہے۔

 نواز شریف کی 2 صفحات پر مشتمل تازہ ترین میڈیکل رپورٹ میں تجویز دی گئی ہے کہ انجیو گرافی جلد از جلد کرائی جائے، اگر نواز شریف کی کورونری انجیو گرافی نہ کرائی گئی تو جان کو خطرہ ہے۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ نواز شریف کے دل کو خون کی روانی تسلسل سے نہیں ہو رہی، غیر متوازن پلیٹ لیٹس کی وجہ سے حالت خطرے سے دوچار ہو سکتی ہے۔ انھیں علاج کے لیے برطانیہ میں طبی ماہرین کی زیر نگرانی رہنا چاہیے۔

نواز شریف کے لیے کنسلٹنٹ ڈاکٹر کاظمی سے 24 فروری کا وقت بھی لیا گیا ہے۔

سابق وزیر اعظم نواز شریف کے وکیل امجد پرویز نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ عدالت کے حکم پر نواز شریف کا میڈیکل سرٹیفکیٹ پیش کر دیا ہے، لندن میں کلینکل ٹیم کی نگرانی میں ان کا علاج جاری ہے، میڈیکل کنسلٹنٹ کے مطابق نواز شریف سفر کے قابل نہیں، نواز شریف کے میڈیکل پروسیجرز اس ماہ کے آخری ہفتے میں شیڈولڈ ہیں۔ انھوں نے کہا کہ ان کی درخواست پر احتساب عدالت نے آج نواز شریف کو حاضری سے استثنیٰ دیا