جمعرات 06 مئی 2021

کیا آپ کا معدہ بے حد خراب ہو چکا ہے معدہ میں بیماری جراثیم ہیں

کشمش کو تو آپ نے دیکھا ہی ہوگا جو کہ انگور خشک کرکے بنائی جاتی ہے اور اس کی رنگت گولڈن، سبز یا سیاہ ہوسکتی ہے۔یہ مزیدار میوہ عام استعمال کیا جاتا ہے مگر کیا آپ کو معلوم ہے کہ اگر اس کا روز استعمال کیا جائے تو آپ کیا فائدہ حاصل کرسکتے ہیں؟اگر نہیں تو ضرور جان لیں۔فائبر سے بھرپور ہونے کے ساتھ ساتھ کشمش میں ٹارٹارک ایسڈ بھی شامل ہوتا ہے جو ہلکے جلاب جیسا اثر دکھاتا ہے۔ ایک تحقیق کے مطابق آدھا اونس کشمش روزانہ کا استعمال کرنے والے افراد کا نظام ہاضمہ دوگنا تیزی سےکام کرتا ہے۔کشمش آئرن سے بھرپور میوہ ہے، جو خون کی کمی دور کرنے کے لیے اہم ترین جز ہے، کشمش کو آسانی سے دلیہ، دہی یا کسی بھی میٹھی چیز میں شامل کرکے کھایا جاسکتا ہے بلکہ ویسے کھانا بھی منہ کا ذائقہ ہی بہتر کرتا ہے۔ تاہم ذیابیطس کے شکار افراد کو یہ میوہ زیادہ کھانے سے گریز کرنا چاہئے یا ڈاکٹر کے مشورے سے ہی استعمال کریں۔

کشمش میں موجود اینٹی آکسائیڈنٹس وائرل اور بیکٹریا سے ہونے والے انفیکشن کے نتیجے میں بخار کے عارضے کا علاج بھی فراہم کرتے ہیں۔ کشمش میں پوٹاشیم اور میگنیشم ہوتا ہے جو کہ معدے کی تیزابیت میں کمی لاتے ہیں، معدے میں تیزابیت کی شدت بڑھنے سے جلدی امراض، جوڑوں کے امراض، بالوں کا گرنا، امراض قلب اور کینسر تک کا خطرہ بڑھ جاتا ہے۔کشمش میں موجود اجزاءآنکھوں کو مضر فری ریڈیکلز سے ہونے والے نقصان سے تحفظ دیتے ہیں جبکہ عمر بڑھنے کے ساتھ پٹھوں کی کمزوری،موتیا اور بینائی کی کمزوری سے تحفظ ملتا ہے۔ اس میوے میں موجود بیٹا کیروٹین، وٹامن اے اور کیروٹین بھی بینائی کو بہتر بنانے میں مدد دیتے ہیں۔کاربوہائیڈریٹس اور قدرتی چینی کی بدولت یہ میوہ جسمانی توانائی کے لیے بھی اچھا ذریعہ ہے، کشمش کا استعمال وٹامنز، پروٹین اور دیگر غذائی اجزاءکو جسم میں موثر طریقے سے جذب ہونے میں بھی مدد دیتا ہے۔ یہی وجہ ہے کہ باڈی بلڈرز اور ایتھلیٹس کشمش کا استعمال عام کرتے ہیں۔ اس میوے میں موجود آئرن بے خوابی یا نیند نہ آنے کے عارضے سے نجات دلانے میں مدد دیتا ہے جبکہ نیند کا معیار بھی بہتر ہوتا ہے۔آئرن، پوٹاشیم، بی وٹامنز اور اینٹی آکسائیڈنٹس بلڈ پریشر کو معمول پر رکھنے میں مدد دیتے ہیں،

یہ بھی پڑھیں  کوئلے جیسا چہرہ 1رات میں دودھ سے بھی زیادہ گورا 2بہت زبردست ٹوٹکے

خاص طور پر پوٹاشیم خون کی شریانوں کے تناؤ کو کم کرتا ہے۔انگور ہر ایک کا پسندیدہ پھل ہے اور اس کی بیل گھروں میں بھی باآسانی لگائی جا سکتی ہے- انگور بھی کئی طرح کے ہوتے ہیں کچھ چھوٹے اور کچھ بڑے ،کچھ سبز رنگ کے اور کچھ جامنی رنگ کے ہوتے ہیں- انگور اپنے ذائقے اور رنگت کے لحاظ سے ایک دوسرے سے مختلف ہوتے ہیں ان کا ذائقہ ترش شیریں ہوتا ہے- انگور کو اگر خشک کر لیا جائے تو اس سے کشمش تیار ہو جاتی ہے کشمش بھی دو طرح کی ہوتی ہے ایک سبز اور دوسری براؤن ہوتی ہے- لیکن طبی لحاظ سے سبز کشمش کو بہتر سمجھا جاتا ہے کشمش میں بھی انگور والے ہی طبی فوائد پائے جاتے ہیں- کشمش میں وٹامن بی،فولاد،کیلشیم،فاسفورس،پوٹاشیم،پروٹین اور وٹامن سی کے علاوہ گلوکوز بھی پایا جاتا ہے- سردیوں میں اس کا استعمال مختلف کھانوں میں شامل کر کے کیا جاتا ہے۔ اللہ ہم سب کا حامی وناصر ہو۔آمین

Facebook Comments