منگل 27 اکتوبر 2020

زیادتی کا شکار مجبور بیٹی کے آخری الفاظ نے در و دیوار ہلادئیے

The last words of the abused daughter shook the door and the wall | Dharti News
فوٹو :فائل

زیادتی کا شکاربیٹی نے زہر کھایا اور دم توڑ گئی۔۔ زیادتی کا شکار مجبور بیٹی کے آخری الفاظ نے در و دیوار ہلا کر رکھ دئیے

تفصیلات کے مطابق بہاولپور میں زیادتی کا شکار طاہرہ نامی لڑکی نے پولیس کے روئیے سے دلبرداشتہ ہو کر خود کشی کر لی۔

پولیس بجائے بااثر ملزمان کو گرفتار کرنے کے صلح کروانے میں لگی رہی ، لڑکی کا بات کبھی تھانے، کبھی چوکی کے دھکے کھاتا رہا لیکن کسی نے ایک نہ سنی۔

زیادتی کا شکار لڑکی نے تنگ آکر خودکشی کی تو یہ معاملہ ڈی پی او کے علم میں آیا تو نہ صرف ملزم گرفتار ہوگیا بلکہ ایس ایچ او سمیت پولیس افسران کو بھی حوالات کی سیر کرنا پڑی۔

لڑکی کے باپ نے کہا کہ ہم درخواست لکھواکر تھانے گئے، تھانے میں درخواست دی تو انہوں نے کہا کہ یہاں کوئی بڑا افسر نہیں ہے۔

انہوں نے کہا کہ آپ درخواست رکھ جاؤ، ہم ایک دو دن میں آپکو بلاتے ہیں پھر آپ سے بات کرتے ہیں۔ ہم خاموشی سے گھر چلے گئے، جب ہم گھر پہنچے تو رات ساڑھے 10 بجے کا وقت تھا

میری بیٹی اٹھی اور واش روم جاکر سپرے پی کر باہر آئی اور مجھے کہا کہ بابا! آپ صبح منہ دکھانے والے ہوں گے۔

ڈی پی او صہیب اشرف نے واقعے کا علم ہوتے ہی تھانے کا دورہ کیا، ایس ایچ او اور دیگر افسران کو حوالات میں بند کروادیا اور ملزم کو فوری طور پر گرفتار کروایا۔